ریحام خان کا مثالی زائچہ، اہم خرابیوں کی نشان دہی اور علاج

عزیزان من! علم نجوم محبت، شادی اور ازدواجی زندگی کے حوالے سے ہماری بہترین رہنمائی کرتا ہے،بشرط یہ کہ ہم بروقت کسی ایسٹرولوجر سے رہنمائی لیں اور اصول و قواعد کے مطابق اپنے برتھ چارٹ میں موجود امکانات پر توجہ دیں،اس موضوع پر ہم نے اپنی نئی کتاب ”پیش گوئی کا فن“ میں بنیادی اصول و قواعد پر روشنی ڈالی ہے جو کسی بھی عورت یا مرد کی شان دار رہنمائی کرسکتے ہیں، یہاں اس کتاب کا ایک باب پیش کیا جارہا ہے، امید ہے کہ ایسٹرولوجی کے شائقین کے لیے یقیناً یہ ایک دلچسپ اور خاصے کی چیز ہوگی۔

شادی اور ازدواجی زندگی

اس میں کوئی شک و شبہے کی گنجائش نہیں ہے کہ انسان کی پیدائش کے بعد اس کی زندگی کا اہم ترین نیا موڑ اس کی شادی ہے‘ اسی لیے ہم پیدائشی زائچے کے بعد شادی کے زائچے کو بھی اہمیت دیتے ہیں‘ یہ وہ وقت ہوتا ہے جب انسان کی زندگی میں ایک نئی شراکت قائم ہوتی ہے اور اس کے ذاتی معاملات صرف اس کی ذات تک محدود نہیں رہتے بلکہ ان میں ایک دوسرا فریق بھی حصہ دار ہوجاتا ہے لہٰذا زندگی کے اس نئے موڑ کو نظر انداز نہیں کیا جا سکتا لیکن اس موڑ کا آغاز کب ‘ کیسے اور کیسا ہوگا ؟ یہ سوال شادی سے پہلے ہر مرد و عورت کے لیے اہمیت رکھتا ہے اور اکثر لوگ منجم حضرات سے یہی سوال کرتے نظر آتے ہیں ‘ اس سوال کا جواب دینے کے لیے علم نجوم ہماری مکمل رہنمائی کرتا ہے اور اس حوالے سے تجربہ شدہ بنیادی اصول مد نظر رکھنا چاہئیں۔
آیا کسی مرد یا عورت کی اپنے شریک حیات سے ذہنی ہم آہنگی ہوگی یا نہیں؟ اس مسئلے کو ازدواجی معاملا ت کے گھروں کے درمیان تعلقات دیکھ کر پرکھا جا سکتا ہے اور اس کی شادی کے امکانات کب تک ہیں‘ اس کا اندازا متعلقہ گھروں کے حاکم سیاروں کے پیریڈز سے کیا جا سکتا ہے۔

شادی کے نمائندے

-1 بنیادی برج کا حامل ساتواں گھر شادی کا ثانوی نمائندہ ہے‘ اگر ساتویں گھر میں کوئی بنیادی برج نہ ہو تو شادی کی نشان دہی کرنے والے اگلے بنیادی برج کے حاکم ( دوسرا ‘چوتھا‘آٹھواں یا بارہواں گھر) کو دیکھا جاتا ہے‘ ہر طالع برج (Birth Sign)کے لیے شادی کے اول نمائندگان یہ ہےں۔
طالع برج حمل:سیارہ زہرہ
طالع برج ثور: سیارہ شمس
طالع برج جوزا:سیارہ مشتری
طالع برج سرطان:سیارہ شمس
طالع برج اسد: سیارہ زحل
طالع برج سنبلہ :سیارہ زہرہ
طالع برج میزان:سیارہ مریخ
طالع برج عقرب:سیارہ مشتری
طالع برج قوس : سیارہ قمر
طالع برج جدی: سیارہ قمر
طالع برج دلو: سیارہ شمس
طالع برج حوت:سیارہ عطارد
-2 زہرہ اور مشتری بالترتیب مرد اور عورت کی شادی کے حوالے سے بیوی اور شوہر کی نمائندگی کرتے ہیں یعنی مرد کے زائچے میں زہرہ اور عورت کے زائچے میں مشتری بیوی اور شوہر کے نمائندگان ہیں۔

شادی کب ہوگی؟

-3 شادی کے ٹائم کا تعین‘ شادی کی نشان دہی کرنے والے باقی ماندہ بنیادی برج کے حامل گھروں کے حاکموں کے ادوار اصغر(Sub Periods) میں اور شادی کی نشان دہی کرنے والے گھروں میںواقع مضبوط سیاروں کے ادوار اصغر میں کیا جا سکتا ہے‘ یہ سیارے شادی کے ثانوی نمائندے بن جاتے ہیں۔
اگر شادی کا اول تعین کنندہ اور شادی کا عمومی نمائندہ مضبوط ہو اور شادی کی نشان دہی کرنے والے گھروں کے م¶ثر ترین پوائنٹس میں کوئی بگاڑ نہ ہو تو شادی مناسب وقت پر ہوجاتی ہے‘ زہرہ کی باقوت پوزیشن اس عمل کو تیز کرتی ہے۔

تاخیر کی وجوہات

-1 زائچے کے ساتویں‘ چوتھے اور دوسرے گھروں کے حساس پوائنٹ متاثر ہوں۔
-2 شادی کا اول تعین کنندہ یا ثانوی نمائندہ متاثرہ ہو یا کسی اور وجوہات کی بنا پر کمزور ہو۔
-3 شادی کے عمومی نمائندے متاثر ہوں یا کسی دوسری وجوہات کی بنا پر کمزور ہوں۔
-4 چوتھے گھر کا حاکم بالکل ہی کمزور ہو۔
-5 آٹھویں اور بارھویں گھر کا بنیادی برج کا حامل حاکم متاثرہ یا کسی اور وجہ سے کمزور ہو۔
-6 جب بھی مرد صاحب زائچہ کے برتھ چارٹ میں سخت بگاڑ ساتویں گھر کو ملوث کرتا ہے تو صاحب زائچہ میںاپنی جسمانی صحت کے معاملے میں اعتماد کا فقدان ہوتا ہے اور وہ شادی کے فیصلے میں تاخیر کرتا ہے۔
فعلی منحوس سیاروں کا اثر تاخیر کرتا ہے جب کہ سب سے منحوس سیارے کا منحوس اثر غیرمعمولی تاخیر کرتا ہے اور شادی ہی نہیں ہونے دیتا‘ سب سے منحوس سیارے کا نحس اثر مناسب اور دیرپا روحانی علاج کے بغیر ختم نہیں کیاجا سکتا ۔
شادی کے نمائندہ سیاروں کی اچھی پوزیشن کے ساتھ ان پر سعد اثرات صاحب زائچہ کی وقت پر اور خوش و خرم شادی کا سب بنتے ہیں جب کہ اگر یہ نمائندے کمزور ہوں تو ذیل کی وجوہات کی بنا پر شادی کو تباہ کن بنا دیتے ہیں۔
-1 شریک حیات بد مزاج ہو سکتا یا ہو سکتی ہے۔
-2 شریک حیات جسمانی تعلقات کے معاملے میں کاہل ہو۔
-3شریک حیات کی یااپنی صحت اچھی نہ ہو۔
-4شادی میں غیرمعمولی تاخیر ہو سکتی ہے۔
-5 بچوں کی پیدائش میں تاخیر ہو سکتی ہے یا بچے بیماری میں مبتلا ہو سکتے ہیں‘ ان کی قبل از وقت موت واقع ہو سکتی ہے یا اولاد کا نہ ہونا۔
-6ذہنی ہم آہنگی کا فقدان ۔
-7 ناموافق فعال ادوار میں انفرادی یامجموعی طور پر کسی بھی مذکورہ وجہ سے طلاق یا علیحدگی ۔
-8 شادی نہ ہونے کی وجہ سے زندگی میںپیدا ہونے والاخلا۔
-9علیحدہ کرنے والی قوتوں کا اثر یعنی فعلی منحوس سیاروں کا شادی کے گھروں یا نمائندوں پراثر ۔
سو فیصد کامیاب شادی شاذو نادر ہی دیکھنے میں آتی ہے تاہم ایسے کیس بھی ہیں جہاں ازدواجی معاملات میں ناچاقی یاناانصافی عارضی ہوتی ہے حالانکہ یہ کہا جاتا ہے کہ جوڑے آسمان میںبنتے ہیں لیکن یہ روایتی مفروضات ہیں جن معاملات میں اللہ نے انسان کو اختیار اور قدرت عطا کی ہے ان میں یہ کہنا کہ جوڑا پہلے ہی سے طے شدہ تھا‘ ایک محل نظر بات ہے‘ ہمیں یہ اختیار حاصل ہے کہ اپنی مرضی سے فیصلے کریں اور اکثر یہ بات مشاہدے میں آتی ہے کہ لوگ خود فیصلے کرتے ہیں یا ان کے والدین فیصلے کرتے ہیں اور بعد میں اسے قسمت کا لکھا کہہ کر اپنی کمزوریوں اور کم نظری کو تحفظ فراہم کرتے ہیں۔
علم نجوم اس حوالے سے معقول رہنمائی فراہم کرتا ہے کہ دو افراد باہمی طور پر ایڈجسٹ ہو سکےں گے یا نہیں؟ لیکن ہمارے معاشرے میں شادی سے پہلے دونوں افرادکی باہمی میچنگ جاننے پر زیادہ توجہ نہیں دی جاتی‘ زیادہ سے زیادہ استخارے وغیرہ پرانحصار کرلیا جاتا ہے یہی وجہ ہے کہ اکثر شادی شدہ جوڑے ایک بھرپور خوش گوار ازدواجی زندگی گزارتے نظر نہیں آتے بلکہ باہمی مزاجی یا جسمانی عدم موافقت کے باعث علیحدگی پر مجبور ہوجاتے ہیں‘ ہمارا تجربہ اور مشاہدہ ہے کہ ویسٹرن ایسٹرولوجی کے مقابلے میں ویدک ایسٹرولوجی مندرجہ بالا تمام حوالوں سے زیادہ بہتر نتائج اور رہنمائی فراہم کرتی ہے،مندرجہ بالا اصول و قواعد کو سامنے رکھتے ہوئے اب ایک مشہور شخصیت کا پیدائشی زائچہ پیش کر رہے ہیں،بہت پہلے جب انھوں نے وزیراعظم عمران خان سے شادی کی تھی ، ہم نے ان کا برتھ چارٹ بنایا تھا اور زائچے کی کمزوریوں پر روشنی ڈالی تھی۔

زائچہ ریحام خان

ریحام خان 3 اپریل 1973 ءکو لیبیا کے شہر اجدابیہ میں پیدا ہوئیں، وقتِ پیدائش 11:31 am ہے۔
زائچے کے پہلے گھر میں برج جوزا طلوع ہے اور راہو ، کیتو محور پہلے اور ساتویں گھر کو متاثر کر رہا ہے،پہلے اور چوتھے گھر کا حاکم عطارد نویں گھر میں ہے جب کہ ساتویں گھر کا حاکم مشتری آٹھویں گھر میں منحوس جگہ ہے جو اس بات کی نشان دہی کرتا ہے کہ شریکِ حیات سے متوقع خوشیاں حاصل نہیں ہوں گی ، شادی کے بعد بیرون ملک جانا بھی ظاہر ہوتا ہے، نویں گھر کا حاکم بارھویں گھر میں ہے یعنی قسمت بیرون ملک لے جائے گی اور ساتویں اور گیارھویںکے حاکم آٹھویں میں ہیں، گویا شادی کے بعد بیرون ملک روانگی اور مفادات کا حصول بیرون ملک ۔
زائچے میں ساتواں گھر شریک حیات سے متعلق ہے اور اس کا حاکم مشتری عورت کے زائچے میں شوہر کا بھی نمائندہ ہے، اس کی کمزوری یعنی خراب جگہ ہونا شوہر سے مایوسی کا اظہار لاتا ہے۔وہ صاحب زائچہ کی امیدوں پر پورا اترتا نظر نہیں آتا ، کسی بھی نوعیت کی کمزوری کا شکار ہوسکتا ہے (علمی ، جسمانی ،اخلاقی یا مالی)
اس زائچے میں شریک حیات سے متعلق ساتواں گھر راہو کیتو سے متاثرہ ہے جو شادی کے بعد بدمزگی اور عدم اطمینان کی نشان دہی ہے، چوں کہ پہلا گھر بھی متاثرہ ہے لہٰذا صاحب زائچہ میں خود سری اور سرکشی کا عنصر نمایاں ہوتا ہے، دیگر متاثرہ گھر ، تیسرا ، پانچواں ، نواں اور گیارھواں ہے،یہ صورت حال ظاہر کرتی ہے کہ

کچھ تو ہوتے ہیں محبت میں جنوں کے آثار
اور کچھ لوگ بھی دیوانہ بنادیتے ہیں

طالع جوزا غیر معمولی ذہانت ، ہوشیاری ، بے صبرا پن، بے چینی اور بے قراری دیتا ہے اور یہ خصوصیات راہو کیتو کی موجودگی سے دو آتشہ ہوجاتی ہیں، یہ طاق برج ہے اور طاق برجوں میں پیدا ہونے والی خواتین اچھی ہاو¿س وائف نہیں ہوتیں،وہ گھر سے باہر نکل کر بھی اپنی صلاحیت اور اپنے ٹیلنٹ کا مظاہرہ چاہتی ہیں ،غیر معمولی کارنامے انجام دینے کی اہل ہوتی ہیں۔
ہمیں نہیں معلوم کہ ان کے سابق شوہر کی تاریخ پیدائش اور اُن کے ساتھ ریحام خان کی میچنگ کس درجے کی تھی، بہر حال 2006 ءایسا سال تھا جب وہ مالی طور پر پریشان تھیں اور انہوں نے کوئی جاب کرنے کا فیصلہ کرلیا اور پہلے اور چوتھے کے حاکم سیارہ عطارد کی نویں گھر میں اچھی پوزیشن کے سبب جرنل ازم کے میدان میں قدم رکھا، اس طرح ایک ٹی وی چینلز سے وابستہ ہوگئیں اور پھر اسی سال انہوں نے شوہر سے علیحدگی بھی اختیار کرلی، واضح رہے کہ زائچے میں سیارہ زہرہ کا مین پیریڈ (دور اکبر) جاری تھا اور 2 اکتوبر 2001 ءسے راہو کا سب پیریڈ (دور اصغر) شروع ہوا تو یقیناً پہلے شوہر سے اختلافات میں اضافہ ہوا،یکم اکتوبر 2004 ءسے 2 جون 2007 ءتک آٹھویں مصیبت کے گھر میں مقیم سیارہ مشتری کا سب پیریڈ جاری رہا، اسی پیریڈ میں پہلے شوہر سے علیحدگی ہوئی۔
ریحام خان کی شادی ستمبر 1992 ءمیں ہوئی، اُس وقت طالع پر قابض کیتو کا مین پیریڈ اور بارھویں گھر پر قابض زحل کا سب پیریڈ جاری تھا اور طلاق 2006 ءمیں ہوئی جب آٹھویں گھر کے قابض مشتری کا سب پیریڈ اور زہرہ کا مین پیریڈ چل رہا تھا، دوسری شادی عمران خان کے ساتھ دسمبر 2014ءمیں ہوئی اس وقت کمزور قمر کا سب پیریڈ جاری تھا اور پھر 2015 ءمیں مریخ کے سب پیریڈ میں طلاق ہوئی، مریخ زائچے میں آٹھویں گھر میں قابض ہے۔
زہرہ زائچے میں ازدواجی خوشیوں کا نمائندہ ہے اور دسویں گھر برج حوت میں شرف یافتہ ہے،عمران خان کی طرح ریحام خان کے زائچے میں بھی ملاویا یوگ ہے مگر تھوڑا سا کمزور ہے کیوں کہ زہرہ شمس کی قربت کی وجہ سے تحت الشاع (Combust) ہوگیا ہے،یہی صورت قمر کی ہے جو دوسرے فیملی کے گھر کا مالک ہے،ذرائع آمدن اور حیثیت کا تعلق بھی دوسرے گھر سے ہے لہٰذا 2006 ءمیں یا اُس کے بعد ریحام خان کے لیے جاب کی ضرورت قابل فہم ہوجاتی ہے اور اس کا مطلب یہ بھی ہے کہ شوہر کی طرف سے انہیں مالی تنگ دستی کی شکایت رہی ہوگی چوں کہ پہلے شوہر کی تاریخ پیدائش وغیرہ ہمارے علم میں نہیں ہے لیکن دوسری شادی عمران خان سے ہوئی اور ان کی تاریخ پیدائش وغیرہ ہمارے علم میں ہے، اگر ہم دونوں کی میچنگ رپورٹ دیکھیں تو وہ بہت عمدہ ہے لیکن اس کے باوجود شادی ناکام رہی ، اس کی وجوہات دونوں کے پیدائشی زائچوں میں موجود مخصوص بگاڑ ہے، ریحام کے زائچے میں راہو کیتو کا نحس اثر زائچے کے اکثر گھروں کو متاثر کرتا ہے جن میں پہلا اور ساتواں گھر نمایاں ہے، مزید یہ کہ دوسرے گھر کا حاکم بھی شمس کی قربت کے سبب غروب ہے اور شادی کا نمائندہ زہرہ بھی غروب ہے، تیسرا سبب شوہر کا نمائندہ آٹھویں گھر میں کمزور اور ہبوط یافتہ (Debilated) ہے گویا زندگی میں کبھی بھی شوہر اور ازدواجی سزندگی کا سکون نہیں ملے گا، مشتری کی اپنے برج ہبوط جدی میں موجودگی اور وہ بھی آٹھویں گھر میں ان لوگوں کے لیے بھی تباہ کن ہوگی جو ریحام خان سے شادی کریں گے، پہلے شوہر کے ساتھ کیا معاملہ رہا، ہم اس کے بارے میں کچھ نہیں کہنا چاہتے لیکن عمران خان سے شادی کے بعد ، عمران خان کو سخت ترین مسائل اور پریشانیوں کا بلکہ رسوائیوں کا سامنا کرنا پڑا، ایسی صورت حال میں ضروری ریمیڈی کی اہمیت بہت بڑھ جاتی ہے، لازمی طور پر عمدہ کوالٹی کا پیلا پکھراج (یلو سفائر) کم از کم 5 کیرٹ وزن میں کسی مبارک وقت پر پہننا چاہیے، اسی طرح سچا موتی (Pearl) اور ڈائمنڈ یا اوپل یا وہائٹ سفائر جیسا کوئی ایک اسٹون بھی ان کے لیے ضروری ہے، یہ ریمیڈیز ازدواجی زندگی ، اچھا شوہر، اسٹیٹس اور فیملی کے حوالے سے کارآمد ثابت ہوں گی، اس صورت حال میں لوح قمر نورانی یا لوح زہرہ نورانی بھی فائدہ بخش ثابت ہوسکتی ہےں۔
عزیزان من! یہ مضمون بھی خاص طور پر ان لوگوں کے لیے لکھا گیا ہے جو ایسٹرولوجی سے دلچسپی رکھتے ہیں اور اس علم کو سیکھنا چاہتے ہیں، اس حوالے سے ہماری کتابیں ”پیش گوئی کا فن حصہ اول و دوم“ بھی ایسے لوگوں کو ضرور پڑھنا چاہیے، ہم نے اپنی کتابوں میں اس علم کے اصول و قواعد کو بہت سادہ اور آسان انداز میں پیش کیا ہے،عام لوگوں کے لیے بھی اگرچہ مضمون کے ٹیکنیکل پہلوو¿ں کو سمجھنا مشکل ہوگا لیکن وہ یہ سمجھ سکتے ہیں کہ شادی ، ازدواجی زندگی کے مسائل درحقیقت انسان اپنے ساتھ ہی لے کر پیدا ہوتا ہے، وہ کسی کے کیے کرائے کا نتیجہ نہیں ہوتے، جیسا کہ ہمارے معاشرے میں سمجھا جاتا ہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں